آزاد جموں کشمیر پبلک سروس کمیشن کی ویب سائٹ اپ ڈیٹ نہ ہوسکی۔

اسلام آباد( ڈبلیو این این)آزاد جموں کشمیر آئی ٹی ایکسپرٹس کی ایک بڑی تعداد موجود ، کروڑو کی فیسیں بٹورنے والے پبلک سروس کمیشن آزاد جموں کشمیر کی ویب سائٹ اپ ڈیٹ نہ کی جاسکی، امیدواران کاوزیر اعظم فاروق حیدر فوری نوٹس لیں،تفصیلات کے مطابق آزاد جموں کشمیر پبلک سروس کمیشن کے مقابلے کے امتحانات میں شمولیت کے لیے فیسیںفیڈرل پبلک سروس کمیشن کے مقابلے میں تین گنا زیادہ ہیں،ویب سائٹ پر آسامیوں کے لیے سلیبس کی تفصیلات،پرانے پرچہ جات پی ایس سی تاحال نہ اپ ڈیٹ کیے جاسکے،آسامیوں کے لیے چالان فارم کی کاپی30کلوبائٹ(کے بی ) میں مانگی جاتی ہے جس کو اپ ڈیٹ کرتے ہئیت نہیں رہتی،چالا ن کاپی کے لیے اضافی اخراجات اٹھانے پڑتے ہیں،آزادجموں کشمیر پی ایس سی کی مختلف آسامیوں کے لیے امیدواران جنھوں نے درخواستیں جمع کروا رکھی ہیں کا کہناہے کہ پی ایس سی کمیشن مین اصلاحات نہ ہوناسوالیہ نشان ہے،مختلف آسامیوں کے لیے فیسیں جمع کرکے تاخیری حربے استعمال کرکے میرٹ کا قتل عام کیا جارہا ہے،آزادجموں کشمیر میں ہزاروں آئی ٹی ایکسپرٹس موجود ہیں لیکن موجودہ فاروق حیدر حکومت ان آئی ٹی ایکسپرٹس کی صلاحیتوں سے استفادہ نہ کرسکے،آئی ٹی شعبہ میں عدم دلچسپی کے باعث اس میدان میں فروغ نہ دیا جاسکا،وزیر اعظم آزاد جموں کشمیر راجا فاروق حیدر جابجا پی ایس سی اور میرٹ بحالی کے گن گاتے ہیں لیکن اصل کہانی عوام کی پہنچ سے دور ہے،وزیر اعظم فاروق حیدر آئی ٹی اصلاحات کرتے ہوئے اول کمیشن کی ویب سائٹ جدید تقاضوں کے مطابق اپ ڈیٹ کروائیں،این ٹی ایس جیسے بدنام زمانہ ادارے کے بجائے آزاد جموں کشمیر میں(جموں کشمیر ٹیسٹنگ سروسJKTS) کے نام سے ایک شفاف ٹیسٹنگ سروس کا قیام عمل میں لائیں،نیز خطہ میں شفاف پی ایس سی کمیشن کا قیام عمل میں لایا جائے، دونوں اداروں میںٹیسٹ انٹرویوز سے قبل عملے سے قرآنی آیات پر تحریر اور زبانی حلف لیا جائے تاکہ بے ایمانی اور بے قاعدگی کے واقعات کاسدباب ہوسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں