مظفرآباد ترک سکونیت کرنے والے خاندان بورڈ آف ریونیو کی ہٹ دھرمی کا شکار

مظفرآباد(لیاقت بشیر فاروقی سے) ترک سکونیت کرنے والے خاندان بورڈ آف ریونیو کی ہٹ دھرمی کا شکار۔ محکمہ بورڈ آف ریونیو نے ڈپٹی کمشنر کے زیر اختیار لوگوں کو ایک نیا کمائی کا طریقہ متعارف کروا دیا۔بورڈ آف ریونیو کی جانب سے ایک قانون سے متصادم نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق کسی بھی ریاستی باشندے کو مستقل پتہ کے علاوہ پشتینی سرٹیفکیٹ اور ڈومیساٸل دوسرے ضلع سے جاری نہیں کیا جا سکتا حالانکہ قانون کے مطابق کوٸ بھی ریاستی باشندہ اگر پانچ سال سے زاید عرصہ سے کسی دوسرے ضلع میں اراضی خرید کر کے مکان تعمیر کرنے کے بعد رہاٸیش پزیر ہو تو وہ اپنے سمیت بال بچوں کا ڈومیساٸل حاصل کر سکتا ہے مگر ریونیو ڈیپارٹمنٹ نے من مرضی سے یہ نوٹیفکیشن جاری کر کے ہزاروں ریاستی باشندوں کو دہری ازیت میں مبتلا کرنے سمیت مالی طور پر بھی زیر بار کر دیا ہے۔ھفتوں ضلعی دفاتر سمیت پٹواری گرداور تحصیلدار اے سی کے پیچھے بھاگ دوڑ اور ہزاروں روپے اخراجات کے علاوہ سفری صعوبتیں برداشت کرنے کے بعد جب مثل مکمل کر کے ڈی سی کے دفتر پہنچتی ہے تو جناب ڈی سی صاحب کی جانب سے حکم نادر شاہی سنایا جاتا ہے کہ بحکم بورڈ آف ریونیو ڈومیساٸل نہیں بن سکتا۔ایسے خاندان بھی موجود ہیں جو اپنی وراثتی زمین کو چھوڑ کر گزشتہ 60 تا 70 سال سے دوسرے اضلاع میں اراضیات خرید کر اپنے گھروں میں آباد ہیں اور اسی ضلع میں ووٹ دیتے چلے آ رہے ہیں مگر بورڈ آف ریونیو کی جانب سے مغایر قانون کیا جانے والا نوٹیفکیشن عوام الناس کے لیے عزاب بنا دیا گیا ہے۔ایسے خاندانوں نے وزیر اعظم آزاد کشمیر سمیت دیگر متعلقہ ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے کے اس ظالمانہ نوٹیفکیشن کو فوری طور پر مسوخ کرتے ہوے ترک سکونت سرٹیفکیٹ کی اجراٸیگی پر لگی پابندی کو ختم کیا جاے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں