بحث کس پر ہونی چاہیے

تحریر آزاد احمد چوہدری

ہمارے ہاں ہر دوسرا شخص سیاست میں دلچسپی رکھتا ہے اور اس کا پسندیدہ مشغلہ بھی سیاست پر گفت وشنید،سیاسی جماعتوں پر بحث ہی ہوتا ہے کہ کونسی جماعت بہتر ہے، کونسا سیاستدان ملک و قوم کے لئے بہتر ہے، کونسا لیڈر اگر آگیا تو ملک چین امریکہ سے بھی آگے نکل جائے گا۔

گھنٹوں بحث کرلیتے ہیں مگر حقیقت سے تمام لوگ آنکھیں چرا جاتے ہیں کیونکہ ہمارے ہاں یہ ضرور ہے کہ لوگ سیاست پر بحث و مباحثے کرتے ہیں مگر سیاسی طور پر مکمل شعور نہیں رکھتے۔ سیاست پر بحث کرنا محض سیاستدانوں کی تعریف یا بے عزتی کر کہ اپنے دل کی غبار اتارنے کا نام نہیں ہے بلکہ سیاست سی جڑی ہوئیں دیگر چیزوں پر بھی بحث کرنا اور حل تلاش کرنا ہے۔

میرے خیال میں دور حاضر میں معیشت پر بحث کرنا اور اس کی بہتری کے حل نکالنا زیادہ بہتر ہے کیونکہ بحیثیت قوم جب تک کسی بھی ملک یا قوم کی معیشت مضبوط نہیں ہوگی وہاں کی سیاست کمزور رہے گی۔
سیاست کی کمزوری سے جمہوریت نہیں پنپ سکے گی اور نتیجہ یہ کہ وہاں کی عوام اپنے بنیادی حقوق سے بھی محروم رہے گی ۔

پاکستان کے دو پڑوسی ممالک چین اور بھارت دنیا میں سب سے زیادہ ابادی رکھنے والے ممالک ہیں مگر انکی مضبوط معیشت کی دنیا محتاج ہے۔ کووڈ19 کی ویکسین کا ہی اندازہ لگا لیں ان دونوں ممالک نے تیار کر لی ہے اور پوری دنیا ان سے خرید رہی ہے جہاں دوسری طرف لاک ڈاؤن اور کرونا نے پوری دنیا کی معیشت کو نقصان پہنچایا وہاں یہ ممالک کثیر زرمبادلہ کمارہے ہیں اور اس کہ ساتھ ساتھ اپنی عوام کو مفت مہیا کر رہے ہیں دوسری جانب ہم دیکھتے ہیں کہ پاکستان میں اس دورانیے میں بس سیاست ہی ہوتی رہی اور حاصل جمع حاصل کچھ بھی نہیں۔
سیاست پر بحث بھی ایسی ہی شے ہے کہ حاصل جمع کچھ نہیں بس کیے جارہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں