جوبلی انشورنس کمپنی کا انچارج سماجی لیڈی کارکن کی رقم بھی ہڑپ کر گیا، ہر فورم پر آواز بلند کی مگر شنوائی نہ ہوئی، میڈم فوزیہ سلیم

میرپور( نمائندہ خصوصی ) جوبلی انشورنس کا انچارج لیڈی سماجی کارکن کے بھی پونے دو لاکھ ہڑپ کر گیا، سماجی کارکن کی جگہ جگہ دھائی لیکن کوئی تدبیر کارگر نہ ہوئی، ڈبلیو این این مظلوم کی آواز بن گیا، مجھے ظالم انسان سے روپے دلوائے جائیں، سماجی کارکن کا ڈبلیو این این سے مطالبہ، کیس عدالت میں ہے خواجہ نثار کا موقف تفصیلات کے مطابق جوبلی انشورنس کے انچارج خواجہ نثار کے خلاف لیڈی سماجی کارکن میڈم فوزیہ سلیم بھی پھٹ پڑیں، انھوں نے کہا کہ خواجہ نثار کو تھوتھال کے علاقے میں ایک مکان 92 لاکھ کا 2016 میں خرید کر دیا جس کا سودا میں نے کروایا اور اس کا کمیشن دو فیصد طے پایا لیکن پانچ سال گزرنے کے باوجود اثر و رسوخ رکھنے والے خواجہ نثار نے مجھے میرا کمیشن ابھی تک ادا نہ کیا تھانہ تھوتھال،ایس ایس پی آفس ، ڈی آئی جی آفس سمیت بے شمار فورم پر آواز بلند کی لیکن کارگر ثابت نہ ہوئی ڈبلیو این این مظلوم کی آواز کو وقت کے ایوانوں تک پہنچائے اور میرے ساتھ انصاف کیا جائے انھوں نے کہا کہ خواجہ نثار نے مجھے دھمکیاں بھی دیں کہ ہمارے راستے سے ہٹ جاؤ ورنہ تمہارے ساتھ اچھا نہیں ہو گا میں نے اپنے وکیل سردار مشتاق مرحوم کے ذریعے لیگل نوٹس بھی بھجوایا لیکن وہاں پر مجھے کہا گیا کہ پچاس ہزار لے لو اور کیس ختم کرو میں انکاری تھی اور اب پانچ سال گزرنے کے بعد شہادتوں تک بات پہنچ چکی ہے میڈم فوزیہ سلیم نے کہا کہ مجھے میری رقم ظالم بے انصاف انسان سے واپس دلوائی جائے اس سلسلہ میں جب خواجہ نثار سے موقف لینے کے لئے رابطہ کیا گیا تو آفس بلانے پر بضد تھے اور میسج پر صرف اتنا ہی کہا کہ میڈم فوزیہ کے خلاف کیس عدالت میں ہے خواجہ نثار کے بارے میں مذید انکشافات ڈبلیو این این نیوز چند روز میں کرے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں