انجینئربریگیڈئر ریٹائرڈ پروفیسر ڈاکٹر یونس جاوید مسٹ یونیورسٹی کے وائس چانسلر تعینات،نوٹیفکیشن جاری کردیاگیا


میرپور(راجہ قیصر افضل/ نمائندہ خصوصی)انجینئربریگیڈئر ریٹائرڈ پروفیسر ڈاکٹر یونس جاوید مسٹ یونیورسٹی کے وائس چانسلر تعینات،نوٹیفکیشن جاری کردیاگیا،وہ اس وقت ہائی ٹیک یونیورسٹی ٹیکسلا کے وائس چانسلر کے عہدے پرفائزتھے ، بریگیڈئر یونس کا تعلق ضلع بھمبربرنالہ کے گائوں ڈھمک سے ہے وہ مسٹ یونیورسٹی میرپور کیلئے وائس چانسلر کے مقابلے میں میرٹ پر پہلے نمبرپرآئے تھے ،راجہ حبیب الرحمن کی طرف سے ایک مرتبہ پھر مسٹ یونیورسٹی میں تعیناتی کے لیے تمام کوششیں رائیگاں ہوگئیں تفصیلات کے مطابق مسٹ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تعیناتی کے حوالے سے قائم سرچ کمیٹی نے اپنی سفارشات میں بریگیڈیئرڈاکٹریونس جاویدکوپہلے نمبر،ڈاکٹرحبیب الرحمن کودوسرے اورثقلین نقوی کوتیسرے نمبرپررکھاتھا سرچ کمیٹی کی سفارشات کودیکھتے ہوئے سینٹ اجلاس میں ڈاکٹریونس کے نام کی منظوری دی گئی جس کے بعد گزشتہ روزنوٹیفیکیشن جاری کردیاگیاواضح رہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں سرچ کمیٹی نے اپنی سفارشات تیارکیں ،ڈاکٹریونس نے 1974میں گورنمنٹ ہائی سکول دھندڑکلاں میٹرک کی اورمیرپوربورڈمیں تیسری پوزیشن حاصل کی 1976میں گورنمنٹ ڈگری کالج بھمبرسے پہلی پوزیشن کے ساتھ ایف ایس سی کی اورپھریونیورسٹی آف انجیئرنگ اینڈٹیکنالوجی لاہورسے بی ایس سی الیکٹریکل انجیئرنگ کی ڈگری حاصل کی اس کے بعد انہوں نے یونیورسٹی آف ڈنڈی یوکے سے ایم ایس سی اور پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی ،1992میں NUSTیونیورسٹی کوبنانے میں کلیدی کرداراداکیااوربعدازاں وہ NUSTمیں بارہ سال HDکمپیوٹرانجیئرنگ کے فرائض سرانجام دیتے رہے جبکہ چارسال بطورڈین کے طورپرتعینات رہے اورنسٹ یونیورسٹی کوپاکستان کی بہترین یونیورسٹی بنانے میں اہم کرداراداکیا انہیں اعلی تعلیمی کارکردگی کی بنیادپرستارہ امتیاز(ملٹری )سمیت مختلف اعزازات سے نوازاگیاواضح رہے کہ انہوں نے میٹرک سے لے کرپی ایچ ڈی تک تمام تعلیم گورنمنٹ سکالرشپ کے تحت حاصل کی ڈاکٹریونس تقریباچارسال تک ہائی ٹیک یونیورسٹی میں بطورڈین تعینات رہے اورپھر2019میں اوپن میرٹ کے تحت ہائی ٹیک یونیورسٹی میں وائس چانسلرمقررہوئے ڈھائی سا ل کے عرصے میں انہوں نے پانچ نئے ڈیپارٹمنٹس اورآٹھ نئے پروگرام شروع کیے ڈاکٹریونس بہترین ایڈمنسٹریٹراستادہونے کے ساتھ ساتھ اعلی پائے کے ریسرچربھی ہیں ان کی چھ کتابیں پانچ بک چیپٹرزاور320سے زائدریسرچ پیپرزدنیاکے بہترین جرنلوں(میگزینوں) اورکانفرنسوں میں پیش کیے جاچکے ہیں -ڈاکٹریونس کی تعیناتی سے مسٹ یوینورسٹی میں گزشتہ دوسال سے جاری بحران بھی ختم ہوگیاہے یہ بحران اس وقت پیداہواجب ڈاکٹراقرارکی بطورمسٹ یونیورسٹی میں وائس چانسلرکی تقرری میں ڈاکٹرحبیب الرحمن کی طرف سے روڑے اٹکائے گئے اورایک عدالتی فیصلے کوبنیادبناکرڈاکٹرحبیب الرحمن غیرقانونی طریقے سے مسٹ یوینورسٹی پرقابض ہوگئے مگربعدازاں سپریم کورٹ نے ڈاکٹرحبیب الرحمن کی تعیناتی کوغیرقانونی قراردیتے ہوئے ہدایت دیں کہ سرچ کمیٹی کی سفارشات کومدنظررکھتے ہوئے نئے وائس چانسلرکی تعیناتی عمل میں لائی جائے جس کے بعد سرچ کمیٹی نے ئے سرے سے سفارشات مرتب کرنے کے بعد ڈاکٹریونس جاویدکومیرٹ لسٹ میں پہلے نمبرپررکھاتھا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں